زندگی سے بھاگم بھاگ کو کم کیجیے اور زندگی کا لطف اٹھائیے

ہر طرف ایک افراتفری کا سماں ہے، ہر کوئی جلدی میں ہے، یہ کر لوں وہ کرلوں، یہ نہ رہ جائے وہ نہ رہ جائے۔ اس بھاگم بھاگ میں ہم زندگی کے بہت سے خوبصورت لمحات دیکھ ہی نہیں پاتے۔زندگی اورہمارے اردگرد موجود لوگ بہت ہی خوبصورت ہیں لیکن کمرشل ازم نے ہمیں ان خوبصورتیوں سے ہٹا کر ایک عجیب طرح کی دوڑ میں لگا دیا ہے، ایک ایسی دوڑ جس کا نہ کوئی آغاز ہے اور نہ ہی اختتام۔ آج کے مضمون کے اندرمیں آپ کو دعوت دیتا ہوں زندگی کو آہستگی کی طرف لانے کی۔ چھوٹے چھوٹے چند اقدامات اٹھا کر آپ اپنی زندگی کو خوبصورتی کی طرف لے کر جا سکتے ہیں، زندگی سے لطف اٹھا سکتے ہیں اور مادیت پرستی کی شروع کردہ کامیابی کی دوڑ سے خود کو الگ کر سکتے ہیں۔

1 ۔ چھوٹی چھوٹی چیزوں پر دھیان دیجیے

میں ایک چھوٹے سے گاؤں میں رہتا ہوں اور میرے آس پاس ایسی کئی چیزیں مجھے میسر ہیں جو میری توجہ اپنی طرف کھینچتی ہیں۔ پرندوں کی آوازیں، پالتو جانور، سرسبز درخت، ہرے بھرے نظارے اور عام سے لوگ۔ ہو سکتا ہے آپ کسی شہر میں رہائش پذیر ہوں اور وہاں گاڑیوں کے دھوئیں اور شور، ہجومِ انساں، سیاست، طاقت، بھاگم بھاگ جیسی چیزیں تو ہوں پر اوپر بیان کردہ چیزوں میں سے کوئی نہ دکھتی ہو۔ پر میں پھر بھی کہوں گا ذرا دیر تو رکیے تو سہی، غور تو کیجیے، سوچیے تو سہی، آپ کو ایسی کئی چیزیں نظر آئیں گی جو کہ آپ کی توجہ کی طالب ہیں، رکیے، ٹھہریے، سوچیے، دیہان دیجیے اور ان چھوٹی چھوٹی خوشیوں سے لطف اٹھائیے۔

2 ۔ نعمتوں کا شمار کیجیے

ہماری آئے روز کی بھاگم بھاگ کی ایک وجہ یہ ہے کہ ہمیں لگتا ہے کہ ہمارے پاس کچھ بھی نہیں ہے اور اگر ہمیں اس زندگی میں کچھ بڑا کرنا ہے، کچھ پانا ہے تو سرپٹ بھاگنا ہو گا۔ خدارا ایک لمحے کے لیے رکیے، ٹھہرییے اور قدرت نے آپ کو جو بے شمار نعمتوں سے نواز رکھا ہے ان کو ذرا شمار میں تو لائیے۔ مانا کہ ابھی ہمارے ہاں بہت سی محرومیاں ہیں، چند طاقتور لوگ بے شمار عام افراد کے حقوق کو دبائے بیٹھے ہیں لیکن اس سب کے باوجود ہمیں خدا تعالٰی نے بے شمار نعمتیں دے رکھی ہیں اور ان کے ذریعے یہ چھوٹی سی زندگی بڑی آسانی سے اچھے طریقے سے گزاری جا سکتی ہے، ان کو شمار کرنا اور لکھنا، یاد کرنا شروع کیجیے۔ اپنی زندگی میں بہتری لانے کی کوشش ہر شخص کو کرنی چاہیے لیکن اس کے لیے پاگل پن کی حدوں کو چھونا ضروری نہیں۔

3 ۔ موازنہ کرنا چھوڑ دیجیے

اپنا یا اپنے بچوں کا دوسروں سے موازنہ کسی طور ایک صحت مند سرگرمی نہیں ہے۔ ہر شخص اس دنیا میں اول پوزیشن حاصل کرنے یا کروڑپتی بننے نہیں آیا اور نہ ہی ہر کروڑ پتی شخص یا آپ کے بیٹے کا وہ ہم جماعت جس نے جماعت میں پہلی پوزیشن حاصل کی ہے، ہر لحاظ سے مکمل ہے۔ ہر شخص کی زندگی میں کامیابیوں کے ساتھ بے شمار ناکامیاں بھی ہیں، ہر شخص کے ساتھ مسائل جڑے ہیں۔ یاد رکھیں کہ سوشل میڈیا اور عام زندگی میں لوگ اپنی زندگی کے صرف مثبت پہلو دوسروں کے ساتھ شیئر کرتے ہیں سو ان مثبت چیزوں کو دیکھ کر اپنی زندگی کے منفی پہلوؤں اور محرومیوں کو ان کے مثبت پہلوؤں کے ساتھ موازنہ نہ کریں، اس سے آپ کی زندگی میں صرف منفی جذبے اور ایک بے نتیجہ بھاگم بھاگ آئے گی۔

4 ۔ کھانا آہستہ کھائیے

ہم لوگ ہر وقت اتنی جلدی میں ہوتے ہیں کہ ہمارے پاس کھانے کے لیے وقت ہی نہیں ہوتا، ہم اپنے مصروف Schedule میں سے کھانے کو حلق سے نیچے کرنے کے لیے بمشکل وقت نکالتے ہیں اور پھر جلدی جلدی کھانے کو معدے میں ٹھونس دیتے ہیں۔ اس طرح کر کے ہم کھانے کے ساتھ ساتھ اپنے ساتھ بھی زیادتی کرتے ہیں۔ براہِ کرم ایسا نہ کیجیے، کھانے کے لیے باقاعدہ وقت نکالیے، چھوٹے چھوٹے لقمے بنائیے اور ہر لقمے سے پوری طرح لطف اٹھائیے، ہر لقمے کو چبا چبا کر کھائیے۔ اس طرح آپ بیماریوں سے بھی محفوظ رہیں گے اور زندگی سے بھی لطف اندوز ہوں گے۔

یہ بھی پڑھیں :   کتابیں پڑھنے کا فن

5 ۔ گاڑی یا موٹر سائیکل آہستہ چلائیے

میں ایک گاؤں میں رہائش پذیر ہوں، کبھی کبھار ہی شہر کا چکر لگاتا ہوں اور شہر میں لوگوں کو ڈرائیو کرتے دیکھ کر میرا تو سر چکرانے لگتا ہے۔خیر اب گاؤں بھی اس معاملے میں شہر سے پیچھے نہیں رہے،لیکن اگر آپ اپنی زندگی میں آہستگی، سکون اور سادگی لانا چاہتے ہیں تو  جب بھی کوئی گاڑی چلائیں، اسے آہستہ چلائیں۔ گاڑی چلاتے ہوئے اپنے آس پاس کی خوبصورتی سے لطف اٹھائیں اور قدرت کی عطا کردہ ایک خوبصورت نعمت زندگی کو بھی محفوظ بنائیں۔ اگر کہیں وقت پر پہنچنا ہے تو وقت سے پہلے نکلیں اور آہستہ ڈرائیونگ کے ذریعے خود کو، ماحول کو، اپنے آس پاس لوگوں کو محفوظ رکھیں اور ساتھ ہی ساتھ پیٹرول کی بچت کریں۔

6 ۔ زیادہ سے زیادہ مطالعہ کیجیے

ہماری تیز رفتار زندگیوں نے ہم سے مطالعہ جیسی پرلطف سرگرمی چھین لی ہے۔ اب ہمارا سارا وقت انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کی نظر ہو جاتا ہے۔ اگر آپ اپنی زندگی میں سکون کی واپسی چاہتے ہیں، ایک بے ہنگم زندگی پر ایک پرسکون زندگی کو ترجیح دینا چاہتے  ہیں تو روزانہ چند گھنٹے یا چند منٹ موبائل، انٹرنیٹ اور زمانہ جدید کی ایسی تمام ایجادات سے چھٹکارا پا کر کسی گوشہ عافیت میں کتاب کے ساتھ وقت ضرور بتائیں، یقین مانیے آپ کی زندگی میں سکون آجائے۔ اس موضوع پر میری تحریر   کتابیں پڑھنے کا فن ضرور دیکھیے۔

7 ۔ روزانہ پیدل چلنے کے لیے ٹائم نکالیے

چند برس قبل تک میں روزانہ قریب 10 کلومیٹر پیدل چلتا تھا اور تھکن میرے قریب تک نہیں پھٹکتی تھی، لیکن پھر یہ معمول نہ رہا۔ چند ماہ قبل مجھے ایک دو کلومیٹر پیدل چلنا پڑا اور میری بری حالت ہو گی تب سے میں نے دوبارہ روزانہ چلنے کی عادت کو اپنی زندگی میں شامل کیا۔ اگرچہ اب میں روزانہ 10 کلومیٹر نہیں چلتا لیکن 5، 10 منٹ ہی کیوں نہ پیدل چلوں، چلتا ضرور ہوں۔ آپ بھی اس چیز کو اپنی زندگی میں شامل کریں، آپ کی زندگی میں سکون اور صحت واپس آئے گی اور تفکرات اور پریشانیاں دور بھاگ جائیں گی۔ آپ چاہیں تو جو وقت آپ پیدل چلنے پر صرف کریں اس دوران آڈیو کتب، میوزک اور پوڈکاسٹ وغیرہ سن سکتے ہیں یا پھر قدرتی نظاروں سے لطف بھی اٹھا سکتے ہیں۔

8 ۔ ایک وقت میں ایک کام کیجیے

یہ وہ چیز ہے جس پر میں ابھی تک خود پوری طرح سے قابو نہیں پا سکا لیکن یقین مانیے Multitasking ہر لحاظ سے تباہ کُن ہے۔ اگر آپ ایک وقت میں دو یا زائد کام کرنے کی کوشش کریں گے تو کوئی بھی کام صحیح سے نہ ہو پائے گا، ہاں خواہ مخواہ کی پریشانی ضرور در آئے گی۔ تو زندگی میں آہستگی اور سکوں کے لیے Multitasking کی عادت کو ضرور ختم کیجیے۔

کیا آپ سادہ، آسان اور پُرسکوں زندگی کے خواہاں ہیں؟
اپنا ای میل ایڈریس درج کیجیے اور میرا ہفتہ وار ای میل نیوز لیٹر جوائن کیجیے

احباب کے ساتھ شیئر کیجیے

فیس بک
ٹوئٹر
گوگل پلس
ای میل
فیس بک
ٹوئٹر
گوگل پلس
ای میل

اپنی رائے کا اظہار کریں

error: !!معذرت، کاپی کی اجازت نہیں